فساد سے متاثرہ شہر نندور بار میں جمعیۃ علماء مہا راشٹر کی جانب سے متاثرین کی باز آباد کاری و راحت رسانی کا کام جاری

Posted in National

ممبئی ، 9 فروری.

(پی ایس آئی)

 شہر دھولیہ سے قریب نندور بار شہر میں رواں ہفتہ کو فرقہ وارانہ فساد برپا ہو جس میں اقلیتوں  کو منصوبہ بند سازش کے تحت نشانہ بنایا گیا  اور انکی املاک کو تباہ و تاراج کیا گیا ۔ 

 

یاد رہے کہ شہر و ضلع نندور بار میں گئو رکشا سمیتی کی جانب سے ہندو دھرنا اندو لن کا اہتمام کیا گیا تھاجو کہ پورے طور غیر قانونی تھا یہ آندولن پوری طرح سے کامیاب ہو تے ہو ئے  فرقہ پرستوں کو ناکام ہو تے ہو ئے دکھائی دے رہا تھا کیونکہ وہ شر پسند شہر کی فضا کو خراب کرنے میں ناکام ہو گئے تھے مگر بد قمتی سے ایک معمولی سی کر کٹ کے آپسی جھگڑے کو وجہ بتاتے ہو ئے فساد برپا کر دیا اور دیکھتے ہی دیکھتے پورے شہر نندور بار میں اس کی لہر پھیل گئی  اور اسا مونگر ،کالی مسجد کے پاس ،باغبان محلہ ٹیپو سلطان چوک ،چودھری گلی باندھر بھیلاٹی بھدرا چوک بوہرا گلی ،پارسی چکی ،ساکری ناکا ،نوناتھ ٹیکری ،وگیرہ علاقوں میں مسلمانوں کے املاک کو چن چن کر نقصان پہنچایا گیا ۔گھروں کو لوٹ مار دکانوں اور گاڑیون کا نقصان کیا گیا خبر ملتے ہی جمعیۃ علماء نندور بار کے صدر مولانا زکریا رحمانی ،حاجی لعل محمد اسمٰعیل منصوری ،وگیرہ سے رابطہ کیا گیا دو دنوں تک پولس کی جانب سے کرفیو رہا جمعہ کے دن مولانا ندیم صدیقی کے حکم پر جمعیۃ علماء دھولیہ کے عبد الاحد اسعدی  جنرل سکریٹری اور راشد انصاری کو بطور نمائندہ بھیجا گیا دونوں حضرات نے وہان پہنچ کر حالات کا جائزہ لیا اور جائزہ میں معلوم ہوا کہ ۱۹؍مکانون ،۴؍موٹر سائیکل ،۵؍مال رکشا ،اور نقد رقومات کے ساتھ جانوروں کی بھی لوٹ مار کی گئی ا ایک ا ندازہ  کے مطابق ۱۵؍ سے ۲۰؍لاکھ کا نقصان کیا گیا جمعہ ۵؍فروری کو نندور بار کے پالک منتری گریش مہاجن نے دورہ کیا متاثرہ علاقوں میں دورہ کے وقت جمعیۃ کا وفد ان کے ساتھ رہا دورہ سے پہلے ریسٹ ہائوس پر ملاقات کرتے ہو ئے جمعیۃ علماء نندور بار و دھولیہ کے وفد نے ملاقات کی اور گریش مہاجن کو بتایا کہ پولس انتظامیہ کی جانب سے لاپرواہی کی وجہ سے شر پسند عناسر اپنے ناپاک ارادوں میں کامیاب ہئو ساتھ ہی بتایا کہ گئو رکشا سمیتی کے اندولن کی وجہ سے شہر نندور بار کی فضا خراب ہو ئی مگر پولس اور انتظامیہ اس بات کو نظر انداز کر تے ہو ئے اس نقطہ کو چھپا رہی ہے اور معمولی کرکٹ کے جھگڑے کو فساد کی وجہ بتا رہی ہے ساتھ ہی باغبان محلہ میں نندور بار نگر پالیکا سے منظور شدہ شہید ٹیپو سلطان چوک کو بھی فساد کی وجہ بنا ڈالا جو کہ پوری  طرح سے قانونی دائرے اور منظوری کے ساتھ بنایا گیا ہے  مگر فرقہ پرست اس چوک کا  کچھ اور نام دیا چاہتے تھے  ،  اس بورڈ کو معاملے کی وجہ بنانے میں آمدار سریش چودھری کا بڑا ہاتھ رہا جو کہ بذات کود بورڈ کی نقاب کشائی اور افتتاح کے پروگرام میں موجود تھے اور اس کی منظوری کے لئے دئے گئے خط پر دستخط بھی کی تھی بعد میں انھوں نے اس دستخط کو نقلی بتایا ۔ان سب معاملہ میں یہ نتیجہ اخذ کیا کہ یہ معاملہ پوری طرح وی ایچ پی ،اور گئو رکشا سمیتی کی جانب سے فرقہ وارانہ کشیدگی پھیلانے کی کو شش اور حرکتوں سے ہوا مگر انتظامیہ اس کو چھپانے میں لگی ہو ئی ہے ساتھ ہی پالک منتری کو بتایا کہ فساد متاثرین کی بھر پائی کی جائے اور بے گناہوں کو رہا کیا جائے ،

دوسری طرف جمعیۃ علماء کے لیگل سیل میں حاجی لعل محمد ،حاجی عرفان میمن ،اور اسمیعیل منصوری نے ایڈوکیٹ اظہر خان کی معاونت سے فساد متاثرین کی جانب سے پولس اسٹیشن میں درخواست داخل کی کہ ہماری ایف آئی آر درج کی جائے اسی طرح جن لو گوں کی گا ڑیوں وغیرہ کو نقصان پہو نچایا گیاتھا  جمعیۃ علماء کی جانب سے مرمت کا کام شروع کردیا گیا ہے ۔ او چھوٹے کارو باریوں کی امداد کرکے  روزگار سے جو ڑنے کی ہر ممکن کو شش کی جا رہی ہے ۔

Блогът Click here очаквайте скоро..

Full premium Here download theme for CMS

Bookmaker Bet365.gr The best odds.