مسلم تعلیمی ادارے معاشی مفادات سے ہٹ کر قومی و ملی مفادات کو ترجیح دیں: حافظ عبدالحفیظ

Posted in National

(منور خان)

ناندیڑ

 الصفہ اسکول میں سالانہ جلسہ و یوم جمہوریہ تقریب کا نہایت ہی تزک و احتشام کے ساتھ انعقاد عمل میں آیا۔باغبان فنکشن ہال میں منعقدہ اس پروگرام میںمدرسہ ہذا کے سال کے بہترین طالب علم کے ایوارڈ اور ہر تعلیمی مظاہرے پر طلبہ کو انعامات ٹرافی و اسناد سے نوازا گیا۔

 

اس جلسہ میں کثیر تعداد میں اولیائے طلبہ و محبانِ علم موجود تھے۔جلسہ کی صدارت محمد شبیرالدین(پرنسپل)،ڈاکٹرمحمدسرفراز رضوی(صدرصفہ ایجوکیشنل اسوسی ایشن،ناندیڑ)نے کی جبکہ مہمانِ خصوصی حافظ عبدالحفیظ صاحب(صدر جمعیۃ العلمائ،ناندیڑ)تھے۔ججس کے فرائض عبدالرحمن سر اور سید نعیم نے ادا کئے اسی طرح سید شکیل سر نے نظامت کے فرائض بحسن خوبی انجام دئیے۔ صدر جلسہ  محمد شبیرالدین نے اپنی تقریر میں بتایا کہ’’ تعلیمی دنیا میں روز بہ روز ہورہی ترقی میں مسلم طلبہ اس دوڑ میں کافی پیچھے ہوتے جا رہے ہیں۔ اس کی وجہ ان میں حوصلہ کی کمی، خود اعتمادی  اورمناسب رہنمائی کا فقدان اور ان میں چھپی صلاحیتوں کا مظاہرہ نہ ہونا ہے! اسی لئے الصفہ اسکول  نے طلبہ میں موجود صلاحیتوں کو منظر عام پر لانے کے ایک ذریعہ کے طور مذکورہ پروگرام کا انعقاد کیا ہے۔‘‘ پروگرام میں طلبہ نے اپنے تعلیمی فن کا عمدگی سے مظاہرہ کیا،حمد ،نعت شریف،نظمیں،قومی گیت اور مختلف سبق آموز ڈرامے پیش کئے۔جلسہ کا آغا نرسری کی طالبہ حمیرہ انجم حافظ جاویدکی تلاوت کلام پاک ہوا۔ ــ’’دعوت دین‘‘ اس عنوان کے تحت مولانا کلیم صدیقی کے ایک واقعہ پر غیر مسلم کو دین کی دعوت کس طرح دیں،ایک ڈرامہ جماعت دوم کی طالباتشیمہ ،ماریہ ،رخسانہنے پیش کئے۔اسی طرح’’ نماز کی دعوت‘‘ اس عنوان پر جماعت اول کے طالب علم محمد صہیب،محمدعلی اور محمدصفوان نے ایک بے نمازی لڑکے کو نماز اور تعلیم کی اہمیت پر ترغیب دینے والاڈرامہ پیش کیا۔’’صحت و تندروستی کا راز‘‘ ڈرامہ جماعت اول کی طالبات عائشہ محمد خان، عائشہ غوث قریشی اور اد یبہ منہاج الدین نے پیش کیا۔بعد ازاں جماعت صغیر اول اور صغیر دوم کے طلباء نے مشترکہ طور پر ثقافتی پروگرام پیش کیا جسمیں سیدسفیان، محمد ابراہیم، سودا تحرین،جویریہ تمبی،عبدالمحسی،عاطفہ فردوس،زینب فاطمہ نے مختلف کرداروں میں مکالمے پیش کئے جس میں سید سفیان کا ’’پولیس‘‘ والا کردارکردار سب سے نمایاں اور بہترین رہاجس کے لئے انھیں  نوازا گیا۔

اسی طرح سال کے بہترین طالب علم کو(Suffa Super Students of the Year) ایوارڈ نے نوازا گیا جن میں جماعت نرسری سے محمد عدنان شیخ محبوب، صغیراول  سے سودا تحرین معزالدین،صغیر دوم سے سبطین رضا محمد یٰسین جماعت اول سے محمد عفان عبدالقدیرباغبان جماعت دوم سے رخسانہ بانو عبدالنعیم کو حاصل ہوئے۔ جماعت نرسری تا دوم کے60 طلباء و طالبات نے الصفہ اسکول کی معلمات کی نگرانی اور سرپرست حضرات کے تعاون  اس پروگرام کو کامیاب بنایا۔اسی جلسے میں معروف صحافی و پریس فوٹو گرافر منور خان کو’’مہاراشٹر راجیہ پترکار مہاسنگھ‘‘ کا بیسٹ فوٹوگرافر ایوارڈ اور وِڈیو جرنلسٹ و صحافی ضمیر احمد خان کو’’مولانا آزاد صحافی ایوارڈ‘‘ حاصل ہونے کے ضمن میں تہنیت پیش کی گئی۔مہمانِ خصوصی حافظ عبدالحفیظ صاحب نے فرمایا کہ موجودہ دورعلم کا دور ہے ساری قوموں نے علم کو ہتھیار بنایا ہے۔اور ہم وہی پسماندگی کا رونہ رو رہے ہیں۔سرپرستوں کو چاہیئے کے وہ اپنے  اولاد کی صحیح تر بیت کریںان کے معاملات کی مناسب نگرانی کریں ورنہ قوم کے یہ نونہال تھوڑی غفلت سے صدیوں پیچھے چلے جائیں گے۔موصوف نے مزید فرمایاالصفہ اسکول کے تعلیمی نظام کو دیکھ کرمجھے بڑی خوشی ہو رہی ہے اس اسکول میں عصری تعلیم کے ساتھ ساتھ دینی و اخلاقی تعلیم کا بہترین امتزاج ہے طلبہ کا تعلیمی مظاہرہ اس کا منہ بولتا ثبوت ہے اگر یہ لوگ اسی طرح محنت کرتے اور کرواتے رہیں تو وہ دن دور نہیں جب اس ادارہ  کے طلبہ سائنٹسٹIAS ،IPS ،کامیاب تاجر اور قوم کے ہمدردبنیںگے۔جلسہ ھذا کو کامیاب بنانے میں الیاس مسلم سر ،محمد ایاز، انجینئر محمد ابوذر،غوث قریشی،فیروز بھائی، اسد بھائی،و قابل ستائش معلمات عائشہ باجی،شبینہ باجی،رضوانہ باجی،صبیحہ باجی اور نشاط باجی کی بھرپور محنت رہی ۔

Блогът Click here очаквайте скоро..

Full premium Here download theme for CMS

Bookmaker Bet365.gr The best odds.